Real Jokes of Pakistani Politics

forums discuss Pakistani politics Real Jokes of Pakistani Politics

  • Creator
    Topic
  • #100514 0 Likes | Like it now
    Participant
    Participant
    Hussain Farooqui
    • Topics:181
    • Replies:1312
    • Contributions:1493
    • Expert
    • ★★★

    مولانا ڈیزل سے کسی نے پوچھا : حلوا کھائینگے یا مرغی ؟

    ڈیزل صاحب : الله تمہیں بھی ایسی مشکل میں ڈالے جس طرح تم نے مجھے مشکل میں ڈال دیا ہے .

Viewing 15 replies - 1 through 15 (of 15 total)
  • Author
    Replies
  • #114742 0 Likes | Like it now
    Participant
    Participant
    Hussain Farooqui
    • Offline
      • Topics:181
      • Replies:1312
      • Contributions:1493
      • Expert
      • ★★★

    I request all the friends of the forum to share real jokes of politics if they know any. I start up this series with a real joke.

    Maulana Mufti Mehmood was very fond of eating sweets despite being a patient of diabetes. Once Pir Pagaro gifted him a box of mithai. The journalist surrounding Mufti Sb. jokingly asked how he would eat that mithal whilst being a patient of diabetes. Mufti Sb. smilingly replied,”No problem. I shall wash this mithai with water before eating.”

    #114743 0 Likes | Like it now
    Participant
    Participant
    Hussain Farooqui
    • Offline
      • Topics:181
      • Replies:1312
      • Contributions:1493
      • Expert
      • ★★★

    In the first public address of Bhutto at Nishter Park, a dirty call name slipped out of his tongue. He promptly advised the tv cameramen to cut the scene but they told him that it was an ongoing live transmission. Later, the govt. officials advised tv personnel to edit the film before its telecast in the English news. In the English news, the edited film was played. Later, by mistake the edited and the unedited films were exchanged. In the Urdu news, again the unedited film was played and the public once more heard the dirty call name slipped out of the tongue of Bhutto.

    #114744 0 Likes | Like it now
    Fear
    • Offline
      • Topics:10
      • Replies:634
      • Contributions:644
      • Professional
      • ★★

    hussain farooqi sahib

    hahahaah

    لا لو چھتر پا لو لما

    :|

    #114745 0 Likes | Like it now
    Participant
    Participant
    Hussain Farooqui
    • Offline
      • Topics:181
      • Replies:1312
      • Contributions:1493
      • Expert
      • ★★★

    In 1977, a session between the alliance of PNA and PPP was going on. The first day, the PNA delegation consisting of Mufti Mehmood, Prof. Ghafoor and Nawabzada Nusrullah took the lunch hosted by the govt.. The next day, they brought a tiffin carrier to eat their lunch. When Kusar Niazi, a delegate of the govt.. saw the PNA members with their tiffin carrier, he asked them the reason why they were not taking lunch with the govt.. delegates like the first day. The PNA delegates told Kusar Niazi that the first today the journalists outside passed a comment to them that they enjoyed a meal which had dishes cooked from 26 nos. of chickens. Kausar Niazi laughingly said, “Now they may say that you people brought this tiffin carrier to take away the remaining chickens after the lunch.”

    #114746 0 Likes | Like it now
    Fear
    • Offline
      • Topics:10
      • Replies:634
      • Contributions:644
      • Professional
      • ★★

    During his speech in White house. John F kennedy said to Zulfiqar Ali Bhutto, “You dont know you are standing in the greatest building of America”

    Zulfiqar Ali Bhutto replied with a smile, “Unfortunately you dont know the great building of America is under my feet”!

    👿

    #114747 0 Likes | Like it now
    Participant
    Participant
    Hussain Farooqui
    • Offline
      • Topics:181
      • Replies:1312
      • Contributions:1493
      • Expert
      • ★★★

    Benazir had a very large team of ministers. Once in a reception line, she saw a man who was looking very familiar to her. She said,”I think I know you gentleman”. He said,” Of course madam, I am one of your minsters. I am the minister of minority affairs.”

    #114748 0 Likes | Like it now
    Bawa
    • Offline
      • Topics:441
      • Replies:5095
      • Contributions:5536
      • Expert
      • ★★★

    جب مردود بھٹو نے انیس سو ستتر میں وقت سے پہلے الیکشن کروانے کا اعلان کیا تو اسوقت اپوزیشن گروپوں میں بٹی ہوئی تھی لیکن الیکشن کا اعلان ہوتے ہی قومی اتحاد وجود میں آ گیا جس سے مردود بھٹو کو بہت پریشانی ہوئی

    مردود بھٹو کو اصل پریشانی اسوقت ہوئی جب مولویوں نے مردود بھٹو کو مخاطب کرکے انتخابی جلسوں میں کھلے عام کہنا شروع کر دیا کہ

    آج نصرت تمھاری ہے لیکن سات مارچ کو نصرت ہماری ہوگی

    :) :D :mrgreen: 😈

    #114749 0 Likes | Like it now
    Bawa
    • Offline
      • Topics:441
      • Replies:5095
      • Contributions:5536
      • Expert
      • ★★★

    یہ بہت مشہور واقعہ ہے. آپ نے بھی شاید سنا ہوگا

    شیخ رشید پارلیمنٹ میں ایک خاتون سیاستدان پر بہت جائز اور ناجائز تنقید کیا کرتا تھا

    ایک بار اس خاتون سیاستدان نے اپنے ایم این ایز کو اکٹھا کرکے شکایت کی کہ شیخ رشید مجھے بہت تنگ بہت کرتا ہے اور انہیں شیخ رشید کے پاس جا کر اس سے اعتجاج کرنا چاہئیے

    جب خاتون سیاستدان کے ایم این ایز نے جا کر شیخ رشید سے اعتجاج کیا تو شیخ رشید نے جواب دیا کہ

    یہ سراسر غلط الزام ہے اور بہتان ہے – میں قسم کھا کر کہتا ہوں کہ میرے پاس تنگ کرنے والی کوئی چیز نہیں ہے

    نوٹ: فورم کے تقدس میں شیخ رشید کے جملے کا آخری حصہ لکھنے سے قاصر ہوں

    :D :D

    #114750 0 Likes | Like it now
    Fear
    • Offline
      • Topics:10
      • Replies:634
      • Contributions:644
      • Professional
      • ★★

    نواز شریف نے آپنے بچوں اور بھتیجوں کو آج مشورہ دیا کہ وہ آپنی دیگر فیکٹریوں کے ساتھ ساتھ بوریاں بنانے والی ایک فیکٹری بھی لگائیں ۔۔ کیونکہ الطاف بھائی کے ساتھ اتحاد ھو چکا ھے کوئی اور بوریاں خریدے یا نہ خریدے الطاف قصائی تو پکا گاہگ ھے

    😈

    #114753 0 Likes | Like it now
    Fear
    • Offline
      • Topics:10
      • Replies:634
      • Contributions:644
      • Professional
      • ★★

    کچھ میاں نواز شریف کے “میاں مٹھو” پر

    khalid ahmed

    جنابِ نواز شریف اور جنابِ شہباز شریف وطن لوٹے، تو، ہم نے محترمی و مکرمی جنابِ مجید نظامی کی خدمتِ اقدس میں ایک محضرِ تشکر روانہ کیا! اس میں ہم نے اُنہیں شریف برادران کی واپسی پر مبارک باد عرض کرتے ہوئے اس امر پر گہرے تشکر کا اظہار کیا کہ اُنہوں نے اپنی مطبوعات کے سلسلے کے وسیلے سے شریف برادران کی جلاوطنی کے زمانے میں اُن کا نام ہر گھڑی عوام کے دِلوں و دماغ میں ترو تازہ اور زندہ تر رکھا! اور ہم نے اس خط میں یہ توقع بھی ظاہر کی کہ شریف برادران جنابِ مجید نظامی کا یہ رویہَّ کبھی فراموش نہیں کر پائیں گے!

    یہ خط کافی طویل تھا! اور اس میں اُن لوگوں کے نام بھی شامل تھے، جنہوں نے نوائے وقت کے صفحات پر جنابِ نوازشریف اور جنابِ شہباز شریف کی عام انتخابات 2008سے قبل وطن واپسی اور انتخابات میں عملی شرکت پر زور دیا تھا!

    اگر کالم نگار کی پشت پرمدیر کا دستِ جرا¿ت آموز دستک نہ دے رہا ہو،تو،کالم نگار جو جی میں آئے لکھ لے! اور اپنی ہی کسی ذاتی فائل میں لگا لے!اُسے اخبار کی فائل کا حصہ صرف ایک جری مدیر ہی بنا سکتا ہے!

    نوائے وقت کے کالم نگار ، جنابِ عرفان صدیقی سے ہماری ارادت کا بنیادی سبب ہی شریف برادری سے ہماری دل بستگی تھی! وہ صدر تارڑ کی سیکرٹری شپ سے علیحدہ ہو کر نوائے وقت بھی آئے اور کالمسٹ بن گئے۔ اس کا اعتراف وہ خود بھی فرماتے ہیں۔ جنابِ عطاءالحق قاسمی بھی اُن دِنوں اپنی محبت کا راگ نوائے وقت کے صفحات پر ہی الاپا کرتے تھے! لیکن حالات نے کچھ ایسا پلٹا کھایا کہ یہ بات پایہ¿ ثبوت تک پہنچا لی گئی کہ جنابِ پرویز مشرف کے آٹھ برس کے اقتدار کے دوران جنابِ نواز شریف کا نامِ نامی صرف جنابِ عطاءالحق قاسمی کے اسمِ گرامی کے طفیل زندہ رہ پایا! اگر جنابِ عطاءالحق قاسمی نواز شریف کا ساتھ نہ دیتے ،تو، شاید آٹھ سال کے دوران جنابِ نواز شریف کے اکلوتے نام لیواجنابِ عطاءالحق قاسمی بھی کسی کے ذہن میں زندہ نہ رہ پاتے!

    ہم جب کبھی اُن کی زبانی ایسے دعوے سننے کی حماقت کرتے،تو، دِل ہی دِل میں اُن کی بڑائی پر ہنستے ہنستے لوٹ پوٹ ہو جاتے! کہ اُس زمانے میں بھی اُصولی موقف رکھنے والے کالم نگاروں اور کالم کاروں کی کوئی کمی نہ تھی! اور ٹی وی چینل اپنی ریٹنگ ٹھیک رکھنے کے لیے جنابِ نواز شریف اور جنابِ شہباز شریف کے لیے تھوڑا بہت وقت مخصوص کیے رکھنے پر مجبور ہو چکے تھے! کیونکہ وہ بھی یہ کریڈٹ اکیلے نوائے وقت کے لیے چھوڑ دینے پر تیار نہیں تھے!

    آج ایک بار پھر عام انتخابات کا غلغلہ بلند ہے! جنابِ نواز شریف اور اُن کے برادرِ خورد جنابِ شہباز شریف اُن کی ٹیم کے ایک رُکن کی حیثیت سے کارفرما ہیں! مگر حقیقت یہ ہے کہ لوگ ٹکٹیں طلب کرنے کے لیے بھی جنابِ عطاءالحق قاسمی کا سہارا لیتے دکھائی دے رہے ہیں! ہمیں اُن کی کوتاہ دستی پر رشک آتا ہے کہ یہ بے چارے نارائن کی تلاش میں چیونٹی کے گھر آنکلے ہیں!

    جنابِ عطاءالحق قاسمی پہلے شاعر بنے! پھر سفرنامہ نگار! پھر ڈرامہ نگار! پھر سفیر مگر، وہ اِن تمام حیثیتوں میں بھی بطور کالم نگار ہی پہچانے گئے! حیران کن بات یہ ہے کہ اب سیاسی سوجھ بوجھ کے اظہار میں بھی اپنی شگفتہ مزاجی کے سبب ہی مقام پا رہے ہیں! اگر کسی محفل میںکوئی سنجیدہ بحث جاری ہو! اور جنابِ عطاءالحق قاسمی خاموش بیٹھے ہوں،تو، اہلِ زر اُنہیں کچھ نہ کچھ کہنے پر مجبور کر دیتے ہیں! اور پھر اُن کی بات سن کر کئی دن تک ہنستے رہتے ہیں! حتیٰ کہ پھر کوئی نہ کوئی ایسا واقعہ سامنے آ جاتا ہے کہ یاروں کو ایک بار پھر سرجوڑ کر بیٹھنا پڑ جاتا ہے! ایسے مواقع پر اُنہیں مدعو کیا جانا کبھی نہیں بھولا جا تا! کیونکہ یار لوگ اس بھولے بادشاہ کی باتیں سن کر اِتنا ہنستے ہیں کہ ہنستے ہنستے اُن کے آنسو نکل آتے ہیں!

    ہم بھی اُن کی باتوں پر ہنستے ہنستے رو پڑنے کا طویل تجربہ رکھتے ہیں! اور آج اُن کے زیرِ اہتمام جاری سیمینار میں سجے سجائے صدارتی فورم اور پہلی صف میں بیٹھے شرکا کے سوا پورا ہال خالی دیکھ کر پہلے،تو، ہمارے آنسو ، ہماری پلکیں چھوڑ گئے! اور اُس کے بعد ہمارے قہقہے ہمارے ہونٹوں کا ساتھ چھوڑ گئے! ہم نے ایسا شان دار منتظم آج تک نہیں دیکھا!

    اس وقت ’فیس بُک‘ پر کسی نابکار نے ایک ایسا لطیفہ اُن کے نام کے ساتھ جوڑ دیا ہے کہ اب تک ڈیڑھ لاکھ سے زائد ناموں کے ساتھ ٹیگ ہو چکا ہے! ابھی،تو، شام کا غلغلہ بلند ہوا ہے! ابھی مہتاب اور زحل کا 20ٹوئنٹی میچ شروع ہونا باقی ہے! ستارئہ سحری زہرہ کے نمودار ہونے تک کتنے گل اور کھل چکے ہوں گے، جنہیں یار لوگ کھلتے ہی چُن لیں گے! اور دوستوں کے کالروں پر سجانے آگے بڑھ چکے ہوں گے

    #114754 0 Likes | Like it now
    Fear
    • Offline
      • Topics:10
      • Replies:634
      • Contributions:644
      • Professional
      • ★★

    انیس سو اٹھانوے کے شروع میں وزیر اعلٰی پنجاب شہباز شریف بھل صفائی کے سلسلہ میں قصورگئے تو انھوں نے ایک گورنمنٹ پرائمری سکول کا دورہ کیا۔ اسکی پانچویں جماعت کے سترہ بچوں میں سے کسی کو معلوم نہ تھا کہ پاکستان کا دارالحکومت کہاں واقع ہے۔ حتٰی کہ کوئی بچہ بانیِ پاکستان کا نام بھی نہ بتا سکا۔

    وزیر اعلیٰ نے پوچھا ‘‘نوازشریف کون ہے۔‘‘

    تو ایک بچہ نے معصومیت سے جواب دیا ‘‘بابرہ شریف کا بھائی؛؛

    بحوالہ: حکمرانوں نے گل کھلائے کیسے کیسے (غریب اللہ غازی)

    😈

    #114755 0 Likes | Like it now
    Fear
    • Offline
      • Topics:10
      • Replies:634
      • Contributions:644
      • Professional
      • ★★

    ایک بار میاں نواز شریف اپنے وفد کے ساتھ چین کا دورہ کرنے گئے تو جہاز کے اندر انہوں نے سری پائے سے بھرے پیالے سب کو دیئے اور خود بھی یہ کھانا کھایا۔ اِس کے بعد ہریسہ، نہاری، حلیم، تکے ، کباب اور بہت سا دوسرا سامانِ خوردونوش آگیا۔ سب نے ڈٹ کرکھایا، پھر لسی کے بڑے بڑے گلاس بھی پینے کو ملے۔ پیٹ بھر کر کھانا کھانے کے بعد سب لوگ نیند کی آغوش میں چلے گئے، بلکہ نیند کی شدت سے میاں صاحب سمیت سب افراد گررہے تھے۔ چین میں ہوائی اڈے پر اُترے تو وزیراعظم سمیت تمام قافلے کو فوراَ ہوٹل پہنچایا گیا۔ وفد کے تمام ارکان جی بھر کر سوئے اور اگلے روز اُٹھے تو پھر سرکاری دورہ شروع ہوا۔

    بحوالہ: حکمرانوں نے گل کھلائے کیسے کیسے (غریب اللہ غازی)

    😈

    #114756 0 Likes | Like it now
    Participant
    Participant
    Hussain Farooqui
    • Offline
      • Topics:181
      • Replies:1312
      • Contributions:1493
      • Expert
      • ★★★

    Once Maulana Ihtesham Ul Haq Thanvi passed a fatwa against Imam Zamin and declared it as bidat. The next day, a newspaper public published a photo of Mulana taken in Ayub Khan’s regime. The picture was showing Mualana Thanvi tying up an Imam Zamin around the arm of Ayub Khan when he was departing to America.

    #114757 0 Likes | Like it now
    Participant
    Participant
    Hussain Farooqui
    • Offline
      • Topics:181
      • Replies:1312
      • Contributions:1493
      • Expert
      • ★★★

    Maulana Noorani was very fond of eating paans. After the fall of Dhaka, paans were not available in Pakistan. The habitual eaters of paans had the problems . Bhutto went to Bengal and sent two baskets of paans to Noorani Mian. Bhutto then asked on media whether Noorani Mian received those baskets of paans or not.

    #114758 0 Likes | Like it now
    Participant
    Participant
    Hussain Farooqui
    • Offline
      • Topics:181
      • Replies:1312
      • Contributions:1493
      • Expert
      • ★★★

    When Maualan Kauser Niazi got into some conflicts with Benazir and Nusrat after the exclusion of Bhutto from power, a PPP’s newspaper named ‘Musawat’ wrote a derogatory article against Kauser Niazi and nicknamed him as ‘Joker Piazi’. For quite sometime, Kausar Niazi was remembered as ‘Joker Piazi’.

Viewing 15 replies - 1 through 15 (of 15 total)

You must be logged in to reply to this topic.